تحریک منہاج القرآن

پس ماندہ مذہبی ذہن کے تیارکردہ فتنہ طاہریہ کی حقیقت

Archive for جون, 2007

رشدی کو سر کا خطاب دینے کیخلاف پاکستان عوامی تحریک کے تحت ملک گیر احتجاجی مظاہرے

Posted by naveedbcn پر جون 29, 2007

رشدی کو سر کا خطاب دینے کیخلاف پاکستان عوامی تحریک کے تحت ملک گیر احتجاجی مظاہرے

پاکستان عوامی تحریک نے برطانیہ کی طرف سے ملعون سلمان رشدی کو ’’سر،، کا خطاب دیئے جانے کے خلاف چاروں صوبوں سمیت آزادکشمیر میں ضلعی سطح پر احتجاجی مظاہرے کیے۔ مرکزی سطح پر لاہور پریس کلب کے سامنے ہونیوالے پُرامن احتجاجی مظاہرے کی قیادت مرکزی صدر فیض الرحمن درانی، سیکرٹری جنرل انوار اختر ایڈووکیٹ اور سینئر نائب صدر چودھری محمد شریف نے کی جبکہ ڈپٹی چیف آرگنائزر محمد اشتیاق چودھری، صوبائی جنرل سیکرٹری لہراسب خان گوندل، آرگنائزر لاہور پروفیسر ذوالفقار علی، حافظ صفدر محمود، جنرل سیکرٹری لاہورحافظ غلام فرید اور صدر لاہور چودھری محمد افضل گجر نے بھی مظاہرے میں شرکت کی۔ ملک بھر میں دیگر شہروں میں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔ مرکزی میڈیا آفس کو موصولہ اطلاعات کے مطابق اسلام آباد، راولپنڈی، گوجرانوالہ، سیالکوٹ، سرگودھا، فیصل آباد، جہلم اور ملتان میں ہونے والے احتجاجی مظاہروں کی قیادت بالترتیب مرزا آصف محمود، مشتاق احمد قادری، عمران علی ایڈووکیٹ، زاہد نعمان قاضی، چودھری اسماعیل سندھو، رفیق نجم، پروفیسر سلیم احمد اور قمر عباس چودھری نے کی۔ کراچی، حیدرآباد، گھوٹکی، میرپورخاص، سیہون شریف میں ہونیوالے مظاہروں میں قیادت ڈاکٹر ایس ایم ضمیر، قیصر اقبال قادری، سید اوسط علی شاہ اور خان محمود بلوچ نے کی۔ اسی طرح ایبٹ آباد، پشاور، کوہاٹ، پہاڑ پور، نوشہرہ، میرپور، مظفرآباد، کوٹلی، کوئٹہ، دالبندین کے پریس کلبز کے سامنے ہونیوالے پرامن مظاہروں کی قیادت بالترتیب حاجی محمد ارشاد، ضیاء الرحمن، مشتاق علی سہروردی، خالد محمود درانی، سید امجد علی شاہ، علامہ عبدالشکور، پروفیسر رشید صدیقی، علامہ پروفیسر پرویز قریشی، سجاد ملک، مالک انقلابی، جی ایم صدیقی، نبی احمد باجوہ ایڈووکیٹ، نور محمد اور حفیظ بلوچ نے کی۔ مظاہروں میں خواتین اور بچوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرین نے رشدی سے سر کا خطاب واپس لینے کے مطالبات پر مبنی پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے اور وہ شاتم رسول رشدی کے خلاف نعرے لگا رہے تھے۔ لاہور پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرے میں ہزاروں افراد شریک تھے۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے صدر پاکستان عوامی تحریک فیض الرحمن خان درانی نے کہا کہ رشدی سے ’’سر،، کا اعزاز واپس لیے بغیر برطانیہ کا مسلمانوں سے اظہار افسوس کرنا کوئی اہمیت نہیں رکھتا۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ نے ملعون رشدی کو ’’سر،، کا خطاب دے کر امت مسلمہ کے ڈیڑھ ارب مسلمانوں کی توہین کی ہے اس لیے فوری طور پر ’’سر،، کا خطاب واپس لیا جائے۔ پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل انوار اختر ایڈووکیٹ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رشدی جیسے ملعون کو سر کا خطاب دینا بین المذاہب ہم آہنگی کیلئے شدید خطرہ ہے اور یہ تہذیبوں کو متصادم کرنے کی سازش ہے۔ برطانیہ نے رشدی کو سر کا خطاب دے کر مسلمانوں کے جذبات کی توہین کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ جانتے ہوئے کہ رشدی امت مسلمہ کیلئے ’’ناپسندیدہ ترین،، شخصیت ہے، برطانیہ کی طرف سے اسے ’’سر،، کا خطاب دینا انتہائی غیرذمہ دارانہ اور غیرسنجیدہ اقدام ہے۔ انہوں نے کہا کہ سلمان رشدی کو ’’سر،، کا خطاب دینا ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ ایک شخص جس نے پوری امت مسلمہ کو دکھی کیا ہو اس کیلئے عزت کے اعلیٰ ترین اعزاز کا اعلان کرنا انتہائی شرمناک عمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا کے مسلمانوں کی نظر میں برطانیہ کا امیج بہت متاثر ہوا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مسلم ممالک کے حکمران او آئی سی کے پلیٹ فارم سے برطانیہ سے مطالبہ کریں کہ ملعون رشدی کو دیا جانے والا خطاب واپس لے۔ اس حوالے سے یو این او بھی اپنا کردار ادا کرے۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جمعۃ المبارک کے اجتماعات میں قرارداد مذمت منظور کرائی جائے گی اور جمعہ کو یوم مذمت کے طور پر منایا جائے گا۔

Posted in خبریں | Leave a Comment »

مقدس مقامات کو نشانہ بنانے کا تسلسل انتہائی مذموم فعل ہے : ڈاکٹر رحیق احمد عباسی

Posted by naveedbcn پر جون 16, 2007

مقدس مقامات کو نشانہ بنانے کا تسلسل انتہائی مذموم فعل ہے : ڈاکٹر رحیق احمد عباسی

لاہور، 14 جون 2007ءتحریک منہاج القرآن کے ناظم اعلیٰ ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے بغداد میں بم دھماکے میں امام حسن عسکری رضی اللہ عنہ کے مزار کے ایک حصے اور دومیناروں کی شہادت کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے اسلام دشمن عناصر کی کارروائی قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دشمن ایسی بزدلانہ کارروائیوں کے ذریعے مسلمانوں کے اندر انتشار پھیلانا چاہتا ہے۔ ایسے واقعات سے اسلام دشمن قوتیں مسلمانوں کو مشتعل کر کے اپنے مذموم مقاصد حاصل کرنا چاہتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کوئی مسلمان ایسا کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتا۔ یہ امت مسلمہ کے درمیان تفرقہ ڈالنے کی سازش ہے۔ انہوں نے کہا کہ عراق کی سرزمین اہل بیت اطہار کے مزارات کی بدولت ساری دنیا کے مسلمانوں کیلئے انتہائی مقدس ہے اور اس خطے سے مسلمانوں کی جذباتی وابستگی ہے اس لیے مزارات کو نشانہ بنا کر شرپسند قوتیں امت مسلمہ کے جذبات بھڑکا کر مسلمانوں کو آپس میں لڑانا چاہتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عراق کے امن کو سوچی سمجھی سازش کے تحت وسائل پر قبضہ کرنے کیلئے تباہ کیا گیا اور اب مقدس مقامات کو نشانہ بنانے کا تسلسل انتہائی مذموم فعل ہے۔ فساد پھیلانے کیلئے اسلام دشمن عناصر مقدس مقامات کو نشانہ بنا رہے ہیں تاکہ مسلمان متحد نہ ہو سکیں۔ انہوں نے کہا کہ مقدس مقامات کی حفاظت کا مناسب بندوبست کرنا عراقی حکومت کی ذمہ داری ہے جس میں شدید غفلت کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔ عراق میں ایسے واقعات کے تسلسل کو نہ روکا گیا تو اس کی ذمہ داری بڑی طاقتوں پر ہو گی۔ ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے مطالبہ کیا کہ یو این او عراق میں امن و امان کی بحالی اور مقدس مقامات کی حفاظت کے حوالے سے اپنا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ عراق میں قیام امن اور مزارات کی حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے مسلم ممالک کے حکمران او آئی سی کے پلیٹ فارم سے مؤثر کردار ادا کریں۔

Posted in خبریں | Leave a Comment »

Complete Videos of Doara of Sahih-ul-Bukhari دورہ صحیح البخاری ویڈیوز مکمل

Posted by minhajian پر جون 8, 2007

Part : 1.1

Part : 1.2

Part : 1.3

Part : 2.1

Part : 2.2

Part : 2.3

Part : 3.1

Part : 3.2

Part : 3.3

Part : 4.1

Part : 4.2

Part : 4.3

Part : 4.4

Part : 5.1

Part : 5.2

Posted in خطابات طاہر القادری, دروس بخاری، دوم, دروس حدیث, درس بخاری، اول | 1 Comment »

الیکٹرانک میڈیا پر پابندی کا حکومتی فیصلہ آزادئ صحافت پر شب خون ہے

Posted by naveedbcn پر جون 1, 2007

الیکٹرانک میڈیا پر پابندی کا حکومتی فیصلہ آزادئ صحافت پر شب خون ہے

وردی اور فوج، اسلام اور نظریہ پاکستان سے زیادہ مقدس نہیں
حکومت پیمرا کو وزارت اطلاعات کے تحت کرنے کا فیصلہ واپس لے
پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی قائدین کا ردعمل پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر فیض الرحمن خان درانی، سیکرٹری جنرل انوار اختر ایڈووکیٹ اور ڈائریکٹر میڈیا اینڈ پبلک ریلشنز ڈاکٹر شاھد محمود نے وفاقی وزارت اطلاعات کی جانب سے الیکڑانک میڈیا کی براہ راست نشریات پر پابندی عائد کرنے اور پیمرا کو وزارت اطلاعات کے تحت دینے کے فیصلہ کو غیر آئینی اور غیر جمہوری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پابندی بین الاقوامی صحافتی اصولوں اور بنیادی آئینی حقوق کی صریحاً خلاف ورزی اور آزادئ صحافت پر شب خون ہے۔ حکومت فوری طور پر الیکڑانک میڈیا پر پابندیوں کا فیصلہ واپس لے اورحکومت اپنی میڈیا پالیسی کو اسلام، آئین اور قانون کے تابع بنائے۔ انہوں نے کہا کہ وردی اور فوج کے خلاف بولنے والے افراد کو سزا دینے سے پہلے پاکستان، نظریہ پاکستان اور اسلامی شعائر اور حدود کا کھلم کھلا مذاق اڑانے والوں کو سزا دی جائے اور فوج کے خلاف بولنے پر پابندی عائد کرنے سے قبل اسلام اور پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی پر پابندی لگائی جائے۔ قائدین نے کہا کہ اسلامی حدود، دینی نظریات وتصورات، نظریہ پاکستان اور بانیان پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے والے افراد اور ایسے پروگراموں پر ضرور پابندی عائد کرنی چاہئے۔ حکومت کو معلوم ہونا چاہئے کہ وردی اور فوج اسلام و پاکستان سے مقدس نہیں ہے۔ آج میڈیا پر حکومتی ایما پر ایسے پروگرامز نشر کیے جا رہے ہیں جواسلامی تعلیمات اور نظریہ پاکستان سے متصادم ہیں اور نوجوان نسل کے اخلاق کا جنازہ نکال رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان میں اسلام کے نام پر ایسے پروگرامز دکھائے جارہے ہیں جن میں اسلامی تعلیمات کو مسخ کر کے پیش کیا جا رہا ہے۔ دین کی الف ب سے نابلد لوگوں کو محقق اور دانشور بنا کر قوم کے سامنے لایا جاتا ہے اور وہ اسلامی شعائر کا مذاق اڑاتے ہیں اور اب میڈیا کے جائز آئینی وقانونی حق کا گلا محض اس لئے دبایا جا رہا ہے کہ وردی اور فوج کو میڈیا پر ڈسکس نہ کیا جاسکے۔ حکومت پیمرا کو وزرات اطلاعات کے ماتحت کرنے کی بجائے دینی نظریات، اسلامی وملکی کلچر کے خلاف جاری پروگرامز کے سلسلہ پر پابندی عائد کرے کیونکہ حکومت کی موجودہ میڈیا روش کی وجہ سے قوم میں شدید اضطراب اور تشویش پائی جاتی ہے۔

Posted in خبریں | Leave a Comment »