تحریک منہاج القرآن

پس ماندہ مذہبی ذہن کے تیارکردہ فتنہ طاہریہ کی حقیقت

الیکٹرانک میڈیا پر پابندی کا حکومتی فیصلہ آزادئ صحافت پر شب خون ہے

Posted by naveedbcn پر جون 1, 2007

الیکٹرانک میڈیا پر پابندی کا حکومتی فیصلہ آزادئ صحافت پر شب خون ہے

وردی اور فوج، اسلام اور نظریہ پاکستان سے زیادہ مقدس نہیں
حکومت پیمرا کو وزارت اطلاعات کے تحت کرنے کا فیصلہ واپس لے
پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی قائدین کا ردعمل پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر فیض الرحمن خان درانی، سیکرٹری جنرل انوار اختر ایڈووکیٹ اور ڈائریکٹر میڈیا اینڈ پبلک ریلشنز ڈاکٹر شاھد محمود نے وفاقی وزارت اطلاعات کی جانب سے الیکڑانک میڈیا کی براہ راست نشریات پر پابندی عائد کرنے اور پیمرا کو وزارت اطلاعات کے تحت دینے کے فیصلہ کو غیر آئینی اور غیر جمہوری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پابندی بین الاقوامی صحافتی اصولوں اور بنیادی آئینی حقوق کی صریحاً خلاف ورزی اور آزادئ صحافت پر شب خون ہے۔ حکومت فوری طور پر الیکڑانک میڈیا پر پابندیوں کا فیصلہ واپس لے اورحکومت اپنی میڈیا پالیسی کو اسلام، آئین اور قانون کے تابع بنائے۔ انہوں نے کہا کہ وردی اور فوج کے خلاف بولنے والے افراد کو سزا دینے سے پہلے پاکستان، نظریہ پاکستان اور اسلامی شعائر اور حدود کا کھلم کھلا مذاق اڑانے والوں کو سزا دی جائے اور فوج کے خلاف بولنے پر پابندی عائد کرنے سے قبل اسلام اور پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی پر پابندی لگائی جائے۔ قائدین نے کہا کہ اسلامی حدود، دینی نظریات وتصورات، نظریہ پاکستان اور بانیان پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے والے افراد اور ایسے پروگراموں پر ضرور پابندی عائد کرنی چاہئے۔ حکومت کو معلوم ہونا چاہئے کہ وردی اور فوج اسلام و پاکستان سے مقدس نہیں ہے۔ آج میڈیا پر حکومتی ایما پر ایسے پروگرامز نشر کیے جا رہے ہیں جواسلامی تعلیمات اور نظریہ پاکستان سے متصادم ہیں اور نوجوان نسل کے اخلاق کا جنازہ نکال رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان میں اسلام کے نام پر ایسے پروگرامز دکھائے جارہے ہیں جن میں اسلامی تعلیمات کو مسخ کر کے پیش کیا جا رہا ہے۔ دین کی الف ب سے نابلد لوگوں کو محقق اور دانشور بنا کر قوم کے سامنے لایا جاتا ہے اور وہ اسلامی شعائر کا مذاق اڑاتے ہیں اور اب میڈیا کے جائز آئینی وقانونی حق کا گلا محض اس لئے دبایا جا رہا ہے کہ وردی اور فوج کو میڈیا پر ڈسکس نہ کیا جاسکے۔ حکومت پیمرا کو وزرات اطلاعات کے ماتحت کرنے کی بجائے دینی نظریات، اسلامی وملکی کلچر کے خلاف جاری پروگرامز کے سلسلہ پر پابندی عائد کرے کیونکہ حکومت کی موجودہ میڈیا روش کی وجہ سے قوم میں شدید اضطراب اور تشویش پائی جاتی ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: